1. محترم مہمان السلام علیکم! فروغ نعت فورم میں سوشل شیئر کا آپشن شامل کیا گیا ہے۔ جب آپ کوئی نیا موضوع شروع کرتے ہیں تو موضوع کے شروع ہو جانے پر موضوع کے اوپر یہ آپشن ظاہر ہوتا ہے اس آپش پر کلک کرنے سے مختلف سوشل نیٹ ورکس کے آئکان ظاہر ہوتے ہیں آپ اپنی پسند کے نیٹ ورک پر اسے شائع کر سکتے ہیں۔میری دوستوں سے درخواست ہے کہ جب بھی کوئی کلام فورم میں شامل کریں تو سوشل شیئر بٹن کے ذریعہ اس کو فیس بک ، ٹویٹر اور گوگل پلس وغیرہ پر بھی شیئر کر دیا کریں اور اگر ممکن ہو تو جس کا کلام ہو اس کی فیس بک وال پر بھی شیئر کیا کریں تاکہ فورم کی ٹریفک میں اضافہ ہو اور لوگوں کی آمد و رفت رہے۔ جوکہ اس فورم کی مقبولیت کے لیے بہت ضروری ہے۔

مناقب اولیا آج حاضر سرِ دربار ہوں شیٗاً اللہ (منقبتِ غوثِ پاک از منوؔر بدایونی)

'مناقب اولیا' میں موضوعات آغاز کردہ از ابوالمیزاب اویس, ‏مارچ 5, 2017۔

  1. ابوالمیزاب اویس

    ابوالمیزاب اویس ــــ:ناظمِ فروغ نعت:ــــ رکن انتظامیہ رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    829

    آج حاضر سرِ دربار ہوں شیٗاً اللہ
    اک گدائے درِ سرکار ہوں شیٗاً اللہ
    اب تو میں جان سے بیزار ہوں شیٗاً اللہ
    کس مصیبت میں گرفتار ہوں شیٗاً اللہ
    اے مرے غوث میں لاچار ہوں شیٗاً اللہ

    راحتِ جانِ حزیں قلبِ پریشاں مددے
    زینتِ بزمِ ازل، محفلِ عرفاں مددے
    میرِ بغداد مددگارِ غریباں مددے
    غوثِ اعظم بمنِ بے سرو ساماں مددے
    دستگیری کا طلبگار ہوں شیٗاً اللہ

    وقت ہے وقت مسلمان پہ آقا دیکھو
    بن گئی مال پہ اور جان پہ آقا دیکھو
    حرف آجائے نہ ایمان پہ آقا دیکھو
    انگلیاں اٹھتی ہیں قرآن پہ آقا دیکھو
    اک اشارے کا طلبگار ہوں شیٗاً اللہ

    سر کہیں اور جھکاؤں مجھے منظور نہیں
    حال دشمن کو سناؤں مجھے منظور نہیں
    در پہ اغیار کے جاؤں مجھے منظور نہیں
    غیر سے مانگ کے کھاؤں مجھے منظور نہیں
    آپ کے در کا نمک خوار ہوں شیٗاً اللہ

    اب نہیں ہے کہیں رہنے کا ٹھکانہ آقا
    بدلا بدلا نظر آتا ہے زمانہ آقا
    ایسی بگڑی ہے کہ مشکل ہے بنانا آقا
    در پہ بلوا کے سنو میرا فسانہ آقا
    کتنا مجبور ہوں لاچار ہوں شیٗاً اللہ

    اپنی راہوں چراغوں کو فروزاں کردو
    کوئی بغداد تک آجانے کا ساماں کردو
    تیرگی میرے مقدر کی درخشاں کردو
    میرِ بغداد یہ مشکل مری آساں کردو
    طالبِ روضہِ سرکار ہوں شیٗاً اللہ

    شافعِ حشر محمد ﷺ کا ثناگر ہوں میں
    جس کے دامن میں نہیں کچھ وہ تونگر ہوں میں
    بے پروبال ہوں، مجبور ہوں، بےزر ہوں میں
    میرے آقا وہ گنہ گار منوؔر ہوں میں
    پھر تہِ دامنِ سرکار ہوں شیٗاً اللہ

    • زبردست زبردست x 1
  2. لب خاموش

    لب خاموش Active Member رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    279
    اپنی راہوں کے چراغوں کو فروزاں کردو
    کوئی بغداد تک آجانے کا ساماں کردو
    تیرگی میرے مقدر کی درخشاں کردو
    میرِ بغداد یہ مشکل مری آساں کردو
    طالبِ روضہِ سرکار ہوں شیٗاً اللہ