1. محترم مہمان السلام علیکم! فروغ نعت فورم میں سوشل شیئر کا آپشن شامل کیا گیا ہے۔ جب آپ کوئی نیا موضوع شروع کرتے ہیں تو موضوع کے شروع ہو جانے پر موضوع کے اوپر یہ آپشن ظاہر ہوتا ہے اس آپش پر کلک کرنے سے مختلف سوشل نیٹ ورکس کے آئکان ظاہر ہوتے ہیں آپ اپنی پسند کے نیٹ ورک پر اسے شائع کر سکتے ہیں۔میری دوستوں سے درخواست ہے کہ جب بھی کوئی کلام فورم میں شامل کریں تو سوشل شیئر بٹن کے ذریعہ اس کو فیس بک ، ٹویٹر اور گوگل پلس وغیرہ پر بھی شیئر کر دیا کریں اور اگر ممکن ہو تو جس کا کلام ہو اس کی فیس بک وال پر بھی شیئر کیا کریں تاکہ فورم کی ٹریفک میں اضافہ ہو اور لوگوں کی آمد و رفت رہے۔ جوکہ اس فورم کی مقبولیت کے لیے بہت ضروری ہے۔

ادیب رائے پوری جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں (منقبتِ غوثِ اعظم)

'مناقب اولیا' میں موضوعات آغاز کردہ از ابوالمیزاب اویس, ‏جنوری 26, 2017۔

  1. ابوالمیزاب اویس

    ابوالمیزاب اویس ــــ:ناظمِ فروغ نعت:ــــ رکن انتظامیہ رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    829

    فاصلوں کو خدارا مٹا دو
    رخ سے پردہ اب اپنے ہٹا دو
    اپنا جلوہ اسی میں دکھا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں


    غوث الاعظم ہو، غوث الوریٰ ہو،
    نور ہو نورِ صلّ علیٰ ہو
    کیا بیان آپ کا مرتبہ ہو
    دستگیر اور مشکل کشا ہو
    آج دیدار اپنا کرا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں

    ایک مجرم سیاہ کار ہوں میں
    ہر خطا کا سزاوار ہوں میں
    میرے چاروں طرف ہے اندھیرا
    روشنی کا طلبگار ہوں میں
    اِک دیا ہی سمجھ کر جلا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں

    ہر ولی آپ کے زیر پا ہے،
    ہر ادا مصطفیٰ کی ادا ہے
    آپ نے دین زندہ کیا ہے
    ڈوبتوں کو سہارا دیا ہے
    میری کشتی کنارے لگا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں


    شدتِ غم سے گھبرا گیا ہوں،
    اب تو جینے سے تنگ آ گیا ہوں
    ہر طرف آپ کو ڈھونڈھتا ہوں
    اور اک اک سے یہ پوچھتا ہوں
    کوئی پیغام ہو تو سنادو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں


    وجد میں آئے گا سارا عالم
    جب پکاریں گے یا غوث اعظم
    وہ نکل آئیں گے جالیوں سے
    اور قدموں پہ گر جائیں گے ہم
    پھر کہیں گے کہ بگڑی بنا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں


    سن رہے ہیں وہ فریاد میری
    خاک ہو گی نہ برباد میری
    میں کہیں بھی مروں شاہِ جیلاں
    روح پہنچے گی بغداد میری
    مجھ کو پرواز کے پر لگا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں


    فکر دیکھو خیالات دیکھو
    یہ عقیدت یہ جذبات دیکھو
    میں ہوں کیا میری اوقات دیکھو
    سامنے کس کی ہے ذات دیکھو
    اے ادیؔب اپنے سر کو جھکا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. لب خاموش

    لب خاموش Active Member رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    279
    سبحان اللہ،،


    وجد میں آئے گا سارا عالم
    جب پکاریں گے یا غوث اعظم
    وہ نکل آئیں گے جالیوں سے
    اور قدموں پہ گر جائیں گے ہم
    پھر کہیں گے کہ بگڑی بنا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں
  3. محمد رضوان

    محمد رضوان Well-Known Member رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    1,112
    فکر دیکھو خیالات دیکھو
    یہ عقیدت یہ جذبات دیکھو
    میں ہوں کیا میری اوقات دیکھو
    سامنے کس کی ہے ذات دیکھو
    اے ادیؔب اپنے سر کو جھکا دو
    جالیوں پر نگاہیں جمی ہیں
  4. محمد رضوان

    محمد رضوان Well-Known Member رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    1,112